اختلاف و انتشار کی بجاے پوری جمیعت کی فلاح و بہبود کے بارے میں فکر کریں

Reflect On the Common Goodwill for the Entire Society and Don’t Divide us

By Word for Peace Correspondent

By Word for Peace Correspondent

نئی دہلی : 23فروری

20مارچ 2016کو دہلی کے رام لیلا میدان میں ہونی والی انٹرنیشنل صوفی کانفرنس کی تیاریوں کے سلسلے میں آج یہاں آل انڈیا علماء و مشائخ بورڈ کے صدر دفتر میں دہلی ائمہ اور اساتذہ کے نمائندہ وفد کی ملاقات بورڈ کے بانی و صدر سید محمد اشرف کچھوچھوی سے ہوئی ۔اماموں اور اساتذہ کی جانب سے کانفرنس کی تیاریوں کا جائزہ پیش کیا گیا اور مزید تیز ی سے کام کرنے کیلئے ایک لائحہ عمل تیار کیا گیا ۔بورڈ کے صدر نے عوامی سطح پر پھیلائی جانے والی غلط فہمیوں کا ازالہ کرنے ہوئے کہا کہ یہ سب ہوائیں ہیں۔ہم سب پوری توجہ کانفرنس پر دینی ہوگی۔یہ کانفرنس تاریخی ہوگی ۔کئی برسوں تک زندہ رہنے والا پروگرام ہوگا۔اس اس جماعت اہل سنت کو فروغ ملے گا۔پچھلی ایک دہائی سے اہل سنت کے حقوق پر غاصبانہ قبضہ کرنے والے کب اس طرح کے اقدامات کو قبول کریں گے۔

نشست کو خطاب کرتے ہوئے درگاہ اجمیر شریف کے گدی نشین اور بورڈ کے سرپرست اعلیٰ سید مہدی میاں چشتی معینی نے کہا یہ کانفرنس وقت کی اہم ضرورت ہے ۔ صوفیائے کرام نے جس سماجی ہم آہنگی کا مظاہر کر کے اور قربانیاں دے کر مذہب کی ترویج و اشاعت کی آج اسی مذہب کو مذہب کا نام لیکر بدنا م کیا جا رہا ہے ۔
میٹنگ میں مہاراشٹر کے صدر سید عالم گیر اشرف نے بھی اظہار خیال کیا۔ انہوں نے کہا آج پھر سے خانقاہوں کے زندہ ہونے اور صوفی روایت کے عام ہونے کی ضرورت ہے ۔علماء و مشائخ کے بیچ کی دوریاں بھی اس کانفرنس سے کم ہونگی۔

وفد کی نمائندگی کرتے ہوئے مولانا عبد القادر حبیبی نے کہا کہ ہم اگر چہ فقہی مسائل کو لیکر ایک دوسرے سے اختلاف کرتے رہے ہیں لیکن اب وقت آ گیا ہے کہ اپنے تما م تر اختلافات کو کنارے رکھ کر پوری جمیعت کی فلاح و بہبود کے بارے میں فکر کریں۔

 

Check Also

How An Act Of Kindness By An Indian-Origin Muslim Helped A Man To Become Top Jurist In South Africa

An Indian-origin shopkeeper based in South Africa became an overnight sensation after the new deputy …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *