صوفیا کی جماعت اسلام کی غلط تشریح کر نے کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ Sufi saints prevent the misinterpretations of Islam by their actions

By Maulana Maqbul Ahmad Misbahi, WordForPeace.com 
حضرت لعل شہباز قلندر علیہ الرحمہ کے مزار پرخود کش دھماکہ انسانی تہذیب و مروت پر حملہ ہے ،
صوفیاء نے اپنی خانقاہوں کے دروازے ہر رنگ و نسل کے لوگوں ،یہاں تک کہ اپنے دشمنوں تک کے لئے بھی کھلے رکھے 

صوفیاء کرام کی مقدس جماعت تاریخ انسانی میں انسانی ہمدردی ، مذہبی رواداری ، غربا پروری اور وسعت قلبی کے لئے مشہور و معروف رہی ہے ۔ انہوں نے بلا تفریق مذہب و ملت تمام اقوام عالم کی بے لوث خدمت کی ہے اور اپنی خانقاہوں کے دروازے ہر رنگ و نسل کے لوگوں یہاں تک کہ اپنے دشمنوں تک کے لئے بھی کھلے رکھے ہیں اور یہی ان کی مقبولیت اور بقاء دوام کا راز ہے ۔ لیکن ان کی یہی خوبی شیطانی مزاج کے حامل لوگوں کے لئے ان کا سب سے بڑا عیب بھی کہلا تی ہے ۔ شیطانی قوتوں کو اس بات کا یقین ہے کہ جب تک اہل اللہ اور صوفیا اسلام کی روحانی تعلیمات اور ان کا پیغام محبت باقی ہے ۔ سماج کو تقسیم کرنے کا کام آسانی کے ساتھ نہیں ہو سکتا ۔اس لئے انہوں نے پچھلے کچھ دہا ئیوں سے امن وشانتی کے ان مراکز ، مزارات مقدسہ کو ہی نشانہ بنانا شروع کر دیا ہے ۔ چنانچہ پچھلی کچھ ایک دہائی میں درجنوں مزارات کو بم دھماکوں سے اڑایا اور توڑا جا چکا ہے جس کا تازہ واقعہ حضرت لعل شہباز قلندر علیہ الرحمہ کے مزار پر شیطانی حملہ ہے ۔ جس میں ایک سو سے زائد لوگ ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہو گئے ۔ یہ حملہ کسی مزار پر نہیں بلکہ اسلام کے قلب پر ہے ۔ کیونکہ صوفیا کی تعلیمات اسلام کا دل ہے ۔ اگر یہ ختم ہو گئے ، تو آسانی کے ساتھ ظلم و تشدد اور قتل و غارت گری کا مذہبی جواز پیدا کیا جا سکتا ہے اور سماج کے مختلف طبقوں کو باہم دست و گریباں کیا جا سکتا ہے ۔ 
در حقیقت صوفیا کی قدسی جماعت اسلام کی غلط تعبیر و تشریح پیش کر نے کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے ، شدت پسند طاقتیں اسلام کا جو مکروہ چہرہ دنیا کے سامنے پیش کرنا چاہتے ہیں ، مزارات سے جاری ہو نے والا فیض اور بندگان خدا کی ان کی بارگاہوں سے عقیدت کیشی اور ربط و تعلق اس راہ میں ما نع ہے ۔ اس لئے اپنے مذموم مقاصد کی تکمیل کے لئے دہشت گرد طاقتیں خود کش حملے کی ذلیل ترین حرکت پر اتر آئی ہیں ۔
حدیث پاک میں پیغمبر اسلام ﷺ نے فرمایا ’’خود کشی کرنے والا جنت کی خوشبو بھی نہیں پا سکتا ‘‘ تو پھر خود کش بمبار کے لئے اسلام میں کوئی گنجا ئش کیسے ہو سکتی ہے ۔ آپ ﷺ نے چیونٹی مارنے پر اپنی زوجہ محترمہ حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہا سے ناراضی کا اظہار فرمایا ۔ 

Check Also

‘Westophobia’ is Dangerous for Muslims

‘Westophobia’ is Dangerous for Muslims

By Waris Mazhari In recent years, what is called ‘Islamophobia’ has become a major issue globally, …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *